Story of a Pious of a Bani Israel

bani israel kay abid ka waqia

بنی اسرائیل کے ایک عابد کا واقعہ

Story of a Pious of a Bani Israel- Bani Israel kay Abid ka waqia

 

بنی اسرائیل میں ایک عابد تھا جس نے چار سو سال تک اللہ تعالیٰ کی عبادت میں مصروف رہا- ایک دن اس کے دل میں خیال گزرا اور اس نے کہا اے خدا اگرتو نے  اس پہاڑ کو پیدا نہ فرمایا ہوتا تو لوگوں کے آنے جانے اور سفر و سیاحت کرنے میں بہت آسانی ہوتی۔

تب اس زمانہ کے نبی علیہ السلام سے رب تعالیٰ نے فرمایا کہ تم فلاں عابد کو بتا دو کہ ہماری ملکیت میں تجھے تصرف کرنے اور رائے دینے کا کوئی حق نہیں۔ اب چونکہ تو نے یہ گستاخی اور جرات کی ہے تو سن کہ تیرا نام نیک بختوں کی فہرست سے خارج کر کے نافرمانوں اور بدبختوں کی فہرست میں لکھتا ہوں۔

جب اللہ کے نبی علیہہ السلام نے اس شخص کو اللہ کا پیغام دیا تو عابدکے دل میں یہ سن کر بڑی خوشی ہوئی اور فوراً سجدہ شکر میں گر گیا۔ اللہ تعالیٰ نے نبی علیہ السلام کے ذریعے کہلوایا کہ او نادان شقاوت اور بدبختی پر سجدہ شکر واجب نہیں ہوتا۔ عابد نے کہا کہ میرا شکر شقاوت پر نہیں ہے بلکہ اس پر ہے کہ میرا نام اللہ تعالیٰ کے کسی دیوان میں تو ہے ۔لیکن اے خدا کے نبی میری ایک حاجت اللہ کی بارگاہ میں پیش کر دو۔

نبی علیہ السلام نے فرمایا کہو کیا ہے؟ اس نے کہا خدا سے کہو کہ اب جب کہ تونے میرے لئے دوزخ میں جانا مقرر کر دیا ہے تو اتنا کرم کر مجھے ایسا بنا دے کہ تمام موحد گنہگاروں کے بدلے صرف میں ہی گنہگار ٹھہروں تاکہ وہ سب جنت میں جائیں۔ فرمان الٰہی ہوا کہ اس عابد سے کہہ دو، تیرا یہ امتحان تیری ذلت کے لئے نہیں تھا بلکہ لوگوں کے سامنے تیرے ایثار کے اظہار کے لئے تھا اب روز قیامت تو جس جس کی شفاعت کرے گا ان سب کو جنت میں بھیج دوں گا۔
حوالہ: کشف المحجوب

Story of a Pious of a Bani Israel- Bani Israel kay Abid ka waqia

Story of a Pious of a Bani Israel- Bani Israel kay Abid ka waqia is a story narrated in Kashaf-ul-Mahjoob by Hazrat Ali Hajveri R.A